وسوسه = مقلدین همیشہ اپنے امام کی بات وقول پرعمل کرتے هیں ، اگرچہ امام کا قول الله ورسول کے قول وحکم کے مخالف کیوں نہ هو

وسوسه = مقلدین همیشہ اپنے امام کی بات وقول پرعمل کرتے هیں
، اگرچہ امام کا قول الله ورسول کے قول وحکم کے مخالف کیوں نہ هو
جواب = یہ وسوسہ بالکل باطل وفاسد هے ، کہ مقلدین امام کے قول
کو الله ورسول کے حکم پرترجیح دیتے هیں ، اور حقیقت حال یہ هے کہ امام مجتهد کے قول
کو الله ورسول کے حکم کے مخالف ظاهرکرنا عموما عوام الناس کوگمراه کرنے اورائمہ مجتهدین
سے بغض وتعصب کی بنا پرکیا جاتا هے ، کیونکہ عموما یہ بات کہنے والے لوگ کسی جاهل کی
تقلید میں کہتے هیں ، باقی ان کے بقول مثلا امام کا فلاں قول قرآن وحدیث کے خلاف هے
، اب اس کہنے والے کونہ توامام کے اس قول کا کچهہ علم هوتا هے ، اور نہ آیت وحدیث کی
کچھ خبرهوتی هے ، بس اندهی تقلید میں اس طرح کے وساوس اور بے سرو پا باتیں یاد کرکے
پهیلاتے رهتے هیں ، اور اگر بالفرض کسی جگہ کسی امام کا قول بظاهر کسی حدیث کے خلاف
بهی نظرآتا هو ، لیکن امام کے پاس اپنے قول پرکسی دوسری حدیث وآیت وغیره سے دلیل موجود
هوتی هے ، لیکن جاهل شخص بوجہ اپنی جہالت کے اس کو نہیں جانتا ، لهذا وه ان ائمہ کرام
لعن طعن کرنا شروع کردیتا هے ، گذشتہ سطور میں شیخ الاسلام ابن تیمیہ کی تصریح گذر
چکی کہ ائمہ مسلمین میں سے کسی نے بهی صحیح حدیث کی مخالفت نہیں کی

By Mohsin Iqbal

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s